پاکستان میں کورونا کی تیسری لہر، پاک فوج نے لوگوں کو خطرناک نتائج سے خبر دار کردیا

پاکستان میں کورونا کی تیسری لہر، پاک فوج نے لوگوں کو خطرناک نتائج سے خبر دار کردیا

By

راولپنڈ: پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے ڈی جی میجر جنرل بابر افتخار نے کہا ہے کہ پاکستان میں اس وقت کورونا کی تیسری لہر جاری ہے جو کہ پہلی دونوں لہروں سے کہیں زیادہ خطرناک اور جان لیوا ثابت ہو رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ وبا کی شدت اور تیز رفتار پھیلاو کی وجہ سے اموات میں بھی تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے۔ انتہائی نگہداشت کے مریضوں کی تعداد میں بے پناہ اضافہ سے صحت کے نظام پر مسلسل دباو بڑھ رہا ہے۔

راولپنڈی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ پوری دنیا اور بالخصوص ہمارا خطہ اس وقت اس وبا سے شدید متاثر ہورہا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ ملک میں اس وقت آکسیجن کی کل پیداوار کا 75 فیصد سے زائد صحت کے شعبے کیلئے مختص ہے۔ کورونا کی موجودہ صورتحال برقرار رہی تو انڈسٹری کیلئے مختص آکسیجن بھی صحت کے شعبے کیلئے وقف کرنا پڑ سکتی ہے۔میجر جنرل بابرافتخار نے بتایا کہ اسلام آباد سمیت ملک کے بھر کے 51 شہروں میں کورونا کے مثبت کیسز کی شرح 5 فیصد سے زائد ہے۔ان کا کہنا تھا کہ اپریل کے مہینے میں کورونا سے اموات کا اوسط تناسب سب سے زیادہ رہا ہے۔ 26 فروری 2020 سے آج تک 17,187 افراد اس وبا کی وجہ سے اپنے پیاروں سے بچھڑ گئے۔

You may also like

%d bloggers like this: